Select Page

Category: Edition 7

علم …. حلم ….اور صبر

علم ….ایک دشت ِ بے اماں ہے ….بے سر وسامانی کا عالم ہے ….اس دشتِ بے اماں میں کسی جان کو امان اُس وقت تک نہیں ملتی جب تک وہ شہر ِ علم میں نہ جا بسے …. یا اُس شہر کی یادہی اُس میں نہ آن بسے !!دشت ِعلم میں جب شہر آباد ہو جاتا ہے‘ تو جان کوبھی امان مل جاتی ہے اورجہان کوبھی ۔ کُل جہان کا سرو سامان اور اِس کی امان …. تہذیب ‘ اخلاق اور تمدّن …. سب شہرِ علم کی دین ہے ….اورشہرِ علمکی اِس دین کو دِین کہتے ہیں۔

Read More

دُعَا

الہٰی واسطہ رحمت کا تجھ کو
الٰہی واسطہ وُسعت کا تجھ کو
الٰہی واسطہ عظمت کا تجھ کو
الٰہی واسطہ قوّت کا تجھ کو

Read More

اِلہٰی ، یا اِلہٰی یا اِلہٰی

اے خاموشی کی زبان سننے والے مالک‘ اے اپنی مخلوق کے ہر حال سے ہمہ حال با خبر رہنے والے مولا‘ ہم پر رحم فرما ! تُو ہی تو جانتا ہے کہ ہم کس چیز سے محروم ہو رہے ہیں، اے بنانے والے ہمیں پھر سے بنا…. ہم شاید ہم نہیں رہے۔ سب کچھ وہی ہے لیکن سب کچھ بدل سا گیا ہے۔ہمارا آسمان خوبصورت ہوتا تھا مگر اب وہی آسمان ہمارے سر پر وزن ڈال رہا ہے۔

Read More

پیلو پکیاں

بہار کا موسم‘ پیار کا موسم ‘ گم شدہ چہروں کے دیدار کا موسم ‘ تھل ‘ بیلے ‘ بار کا موسم ‘پیلو پکنے کا موسم در اصل وصالِ یار کا موسم بڑے انتظار کے بعد آتا ہے۔ خواجہ غلام فریدؒ نے ” پیلُو “ کو تکمیلِ عرفان بنا دیا۔

Read More