Select Page

Author: Dr. Azhar Waheed

حرف ِآغاز

ہم میںسے ہر شخص ایک دوسرے کے حقوق کی امانت اٹھائے ہوئے ہے … جب تک ان امانتوں کوپوری دیانت داری سے ہم حقداروں کو لوٹانہیںدیتے ‘ امن ِ عالم ایک خواب کاعالم رہے گا۔حق دار کو حق لوٹانا‘ کسی قانون یا سزا کے ڈر سے نہ ہونا چاہیے

Read More

حرف ِآغاز

کام میں اخلاص یہ ہے کہ اسے اپنی ذات کا حصہ بنالیا جائے … مگر اپنی اَنا کا نہیں۔ کام میں اِخلاص کا تقاضا یہ ہے کہ جب سونپ دیا جائے تو اِسے قبول کرنے میں متامّل نہ ہو… جب واپس لے لیا جائے تو مزاحم نہ ہو …اور جب اپنے سے بہتر انسان میسر آجائے تو اُس کے سپرد کر دینے میںمتردّد نہ ہو۔

Read More

حرف ِآغاز

دنیا دار کی نیکی کی کوکھ میں ایک برائی پوشیدہ ہوتی ہے … یہ برائی اس وقت جنم لیتی ہے جب وہ اپنی من مرضی کی نیکی کرتا ہے یا پھر نیکی میں من مرضی کرنا چاہتا ہے …کہ اس من مرضی کاتعلق من سے نہیں ٗ تن سے ہوتا ہے ۔ من مرضی کاسیدھا مطلب ہے من مانی کرنا …

Read More

حرف ِآغاز

کوئی انسان اس وقت تک کسی کی تعریف نہیں کر سکتاجب تک وہ خودبھی اس تعریف کا اہل نہ ہوجائے۔کسی کی عظمت کا معترف ہونے والا خود بھی ایک عظمت کا حامل ہوتاہے … اور کسی انسان کی عظمت کا منکردراصل خود کسی تعریف کے قابل نہیں ہوتا۔ جو کسی انسان کا معترف نہیںہوتا‘ وہ خود معتبر نہیںہوتا۔

Read More
  • 1
  • 2